غیر ملکیوں نے ہمارے آبی گزرگاہوں پر حملہ کیا



جنگلی خرگوش

جنگلی خرگوش

انسانی آبادی کے بڑھتے ہوئے سفر سے یہ تعجب کی بات نہیں ہے کہ دنیا بھر میں اب متعدد پرجاتیوں کو ان کی آبائی زمین سے بہت دور پایا جاتا ہے۔ جانوروں کو مختلف ممالک میں متعارف کروانا صدیوں سے جاری ہے ، پہلے خرگوش کے بارے میں سوچا گیا تھا کہ وہ تقریبا 1،000 ایک ہزار سال قبل برطانیہ میں نمودار ہوا تھا اور اگرچہ یہ معلوم ہوتا ہے کہ وہ برطانوی نسل سے اچھی طرح سے ملا ہوا ہے ، لیکن وہ ہر سال لاکھوں پاؤنڈ مالیت کا نقصان پہنچا سکتا ہے۔ فصلوں کو

نہ صرف غیر مقامی نسلیں مقامی لوگوں کی فلاح و بہبود اور معاش پر اثر انداز ہوتی ہیں بلکہ وہ اکثر یا تو بہت زیادہ مقدار میں ایسے پودوں کو کھا کر اپنے نئے ٹھکانے پر حاوی ہوجاتے ہیں جن پر ان گنت دیسی نسلیں انحصار کرتی ہیں ، یا خود جانوروں کو کھا رہی ہیں۔ ماحولیاتی ایجنسی کی طرف سے گذشتہ ہفتے جاری کردہ ایک حالیہ مطالعے میں ہمارے آبی گزرگاہوں پر دس انتہائی ناگوار نوع میں سے ایک 'ہٹ لسٹ' مرتب کی گئی ہے جس کی بحالی کے لئے ایک سال میں 7 1.7 بلین لاگت آسکتی ہے۔


قاتل-کیکڑے
قاتل-کیکڑے

واٹر پرائمروز
واٹر پرائمروز

فلوٹنگ پینی وورٹ
فلوٹنگ پینی وورٹ

امریکی سگنل کری فش
امریکی سگنل کری فش

ٹاپموت گڈجن
ٹاپموت گڈجن

وشال ہوگویڈ
وشال ہوگویڈ

جاپانی نوتوید
جاپانی نوتوید

ہمالیہ بلسم
ہمالیہ بلسم

امریکی منک
امریکی منک

طوطا
طوطا

دلچسپ مضامین